بین الاقوامی

پاکستانی امام کو تاحیات جلا وطنی اور 18ماہ قید کی سزا

فرانس (میر مختار میر) فرانس کی ایک مقامی عدالت نے پاکستانی امام کو سوشل میڈیا پر انتہا پسندی کی تشہیر کے الزام میں گرفتار کیا اور جمعرات کے روز فرانس کے مضافاتی شیر پیر سٹی کی عدالت میں انھیں 18ماہ کی سزا سنائی اور فرانسیسی سر زمین پر تاحیات داخلہ پر پابندی عائد کردی۔
فرانس کی قوبہ مسجد کے امام لقمان حیدر قادری نے سوشل نیٹ ورک ٹک ٹاک پر جاری کی جانے والی تین ویڈیوز میں چارلی ایبڈو کے بارے میں قابل مزمت تبصرہ، پیغمبر اسلام کی خاطر اپنے آپ کو قربان کرنا اور اس شخص کو خراج تحسین پیش کیا جس نے چارلی ایبڈو پر حملہ کیا تھا جس کے نتیجے میں انھیں سزا سنائی گئی۔ عدالتی کارروائی کے دوران ملزم نے متعدد بار معافی یہ کہ کر مانگی کہ وہ اس سے سوشل میڈیا پر شہرت حاصل کرنا چاہتے تھے۔ میں صوفی اسلام کا پیروکار ہوں جو امن اور محبت کا پیغام دیتا ہے۔ مقامی فرانسیسی میڈیا کے مطابق قاری لقمان نے فرانسیسی بولنے سے قاصر ہونے کے سبب ایک مترجم کے توسط سے عدالت کو بتایا کہ وہ اس قانون سے لا علم تھا اس نے سوشل میڈیا پر شہرت حاصل کرنے کی خاطر یہ ویڈیو بنائی تھیں لہذا اسے معاف کر دیا جائے۔ مگر عدالت نے دہشت گردی کے دفاع کا مرتکب ثابت کرتے ہوئے 33 سالہ امام قاری لقمان حیدر قادری کو 18 ماہ کی سزا اور تا حیات ملک بدر کی سزا سنا کر انھیں جیل بھیج دیا۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *