18

تیسری اہلیہ 50 سالہ میلانیا ٹرمپ طلاق لینے والی ڈونلڈٹرمپ

وائیٹ ہاؤس سے نکلتے اور عہدہ صدارت سے الگ ہونے کے فوری بعد انہیں ایک اور زور دار دھچکا لگنے والا ہے، کیوں کہ ان سے ان کی تیسری اہلیہ 50 سالہ میلانیا ٹرمپ طلاق لینے والی ہیں۔

ڈونلڈ ٹرمپ سے گزشتہ چار سال سے تنگ میلانیا ٹرمپ نے اب شوہر سے طلاق لینے کا فیصلہ کرلیا ہے اور ممکنہ طور پر شوہر کے عہد صدارت سے الگ ہوتے ہی وہ طلاق کے لیے عدالت سے رجوع کریں گی۔

برطانوی اخبار دی انڈیپینڈنٹ میں شائع رپورٹ میں ڈونلڈ ٹرمپ اور ان کی اہلیہ میلانیا ٹرمپ کے درمیان گزشتہ چار سال سے کشیدہ تعلقات کا ذکر کرتے ہوئے وائیٹ ہاؤس کی سابق ملازمہ کے دعووں کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ میلانیا ٹرمپ شوہر سے طلاق لینے پر غور ر رہی ہیں۔تحریر جاری ہے‎

واہیٹ ہاؤس کے ملازمیننے بتایا کہ دونوں گزشتہ چار سال سے صدارتی ہاؤس میں الگ الگ کمروں میں رہتے تھے۔

کہ 2016 سے اب تک دونوں کے درمیان کشیدہ تعلقات کی خبریں آتی رہیں اور میلانیا ٹرمپ 4 سال سے مجبوری کے تحت ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ رہنے پر مجبور ہوئیں۔

وائیٹ ہاؤس کی ایک سابق ملازمہ کے ماضی میں دیے گئے بیانات کا ذکر کرتے ہوئے بتایا گیا کہ 2016 کے ایک ہی محل میں رہنے کے باوجود میلانیا اور ڈونلڈ ٹرمپ الگ الگ کمروں میں رہتے تھے۔

اسی طرح رپورٹ میں وائیٹ ہاؤس کی سابق ملازمہ اور میلانیا ٹرمپ کے قریب رہنے والی اوماروسا کے تازہ بیان کا حوالہ دیتےہوئے بتایا کہ خاتون اول صدر سے طلاق لینے پر غور کر رہی ہیں۔

ایوانکا اور میلانیا کے درمیان تنازعات کی خبریں بھی آتی رہتی ہیں—فائل فوٹو: اے پی
ایوانکا اور میلانیا کے درمیان تنازعات کی خبریں بھی آتی رہتی ہیں—فائل فوٹو: اے پی

رپورٹ کے مطابق اوماروسا کا کہنا تھا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے عہدہ صدارت کے ختم ہونے کے فوری بعد میلانیا ٹرمپ نے شوہر سے طلاق لینے کا منصوبہ بنا رکھا ہے۔

میلانیا ٹرمپ ہر ایک پل کو گن رہی ہیں، وہ جلد طلاق لے کر آزادی حاصل کرنا چاہتی ہیں۔

اوماروسا کے مطابق اگر میلانیا ٹرمپ وائیٹ ہاؤس میں رہائش کے دوران شوہر سے طلاق لیتی توں تو وہ اسے سخت مشکلات میں ڈال کر اپنا بدلہ لیتا، اس لیے میلانیا نے 4 سال گن گن کر صبر میں گزارے۔

وائیٹ ہاؤس میں ٹرمپ خاندان کے اختلافات پر کتابیں شائع ہوچکی ہیں—فائل فوٹو: اے ایف پی
وائیٹ ہاؤس میں ٹرمپ خاندان کے اختلافات پر کتابیں شائع ہوچکی ہیں—فائل فوٹو: اے ایف پی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں