37

موٹروے ریپ کیس کا ایک ملزم گرفتار، اعتراف جرم کرلیا

عابد ملہی کو گزشتہ روز لاہور کی کرائم انویسٹی گیشن ایجنسی (سی آئی اے) نے صوبائی دارالحکومت لاہور سے 33 کلومیٹر دور منگا منڈی کے علاقے سے گرفتار کیا تھا۔

پنجاب آپریشن ڈپٹی انسپکٹر جنرل (ڈی آئی جی) سہیل سکھیرا نے کہا کہ ملہی کے اہلِ خانہ کو رہا کرنے کی پولیس کی حکمت عملی اس وقت کامیاب ثابت ہوگئی جب ملزم نے اپنی والدہ سے فون پر رابطہ کیا۔

ملزم کی گرفتاری پولیس کی جانب سے اس کے والدین، بھائی اور اہلیہ کی رہائی اور انہیں پرانی موبائل سمز استعمال کرنے کی اجازت دینے کے بعد عمل میں آئی تھی۔

ڈی آئی جی نے بتایا کہ پولیس کی خصوصی ٹیمز ہائی الرٹ تھیں اور انہوں نے فیصل آباد کی کال ٹریس کی جہاں ملزم روپوش تھا۔

ڈی آئی جی نے بتایا ملزم کی والدہ نے اسے کہا کہ انہیں اور خاندان کے دیگر افراد کو پولیس نے رہا کردیا ہے جس پر اس نے منگا منڈی میں والدہ سے ملاقات کی خواہش ظاہر کی اور منصوبے کے مطابق اپنی والدہ کے گھر پہنچ گیا۔

جیسے ہی ملزم گھر میں داخل ہوا وہاں تعینات پولیس ٹیم نے چھاپہ مار کر بغیر کسی مزاحمت کے ملزم کو گرفتار کرلیا۔

پولیس نے عدالت سے ملزم کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی جسے عدالت نے منظور کرتے ہوئے ملزم کو 28 اکتوبر تک جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا۔

ملزم کو سخت سیکیورٹی میں عدالت پہنچایا گیا اس دوران اس کا چہرہ کپڑے سے ڈھکا ہوا تھا جسے سماعت کے دوران ہٹا دیا گیا تھا۔

سماعت کے دوران جج ارشد حسین بھٹہ نے پروسیکیوشن کی جانب سے ملزم کے شناختی پریڈ کی درخواست منظور کرتے ہوئے اسے جلد از جلد مکمل کرنے کی ہدایت کی۔

اس کے علاوہ کیس کے دوسرے ملزم شفقت کو بھی آج انسداد دہشت گردی عدالت میں پیش کیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں