5

پرندوں کے بعد برڈ فلو انسا نوں میں بھی پھیل گیا 7افراد میں وائرس کی تصدیق

ماسکو(این این آئی)دنیا میں پہلی مرتبہ پرندوں میں پائے جانے والے برڈ فلو وائرس کی ایک خاص قسم کی انسانوں میں تشخیص ہوئی ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق روس میں ایک پولٹری فارم پر کام کرنے والے سات ملازمین میں H5N8 برڈ فلو وائرس کے کیسز کی تشخیص ہوئی ہے۔جس کے بعد حکام نے عالمی ادارہ صحت کو اس سے متعلق آگاہ کردیا ۔امریکی اخبار کے مطابق روسی وزارت صحت کے چیف انا پوپوا کے مطابق ملک کے جنوب میں واقع ایک پولٹری فارم پر کام کرنے والے سات ورکروں میں برڈ فلو کی تشخیص ہوئی ہے،انا پوپوا نے اپنے بیان میں

کہا کہ اگرچہ اس وقت انسانی صحت کو برڈ فلو سے کم خطرہ ہے اور یہ وائرس ایک شخص سے دوسرے میں منتقل نہیں ہوتا ہے، تاہم دیکھنا یہ ہے کہ مستقبل میں انسانوں میں اس وبا کے پھیلا کو روکنے کے لیے عالمی سطح پر کونسے اقدامات اٹھائے جاتے ہیں۔انہوں نے مزید بتایا کہ پولٹری فارم کے ملازمین برڈ فلو کے کیسز درمیانی نوعیت کے تھے اور وہ روبہ صحت ہوئے ہیں۔عالمی ادارہ صحت کے مطابق H5N8 وائرس انسانوں میں شازونادر ہی پایا جاتا ہے تاہم ان افراد میں اس کے پھیلنے کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے جو مردہ متاثرہ پرندوں اور ان کے ارد گرد کے ماحول میں رہ رہے ہوں۔برڈ فلو کا یہ وائرس انسانوں میں شدید بیماری اور موت کا سبب بھی بن سکتا ہے۔نیدرلینڈز کے محققین کے مطابق برطانیہ کے بطخ فارم میں 2014 میں برڈفلو کی جو خطرناک قسم سامنے آئی تھی وہ روس کے جنگلی پرندوں سے پھیلی تھی۔



اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں