7

این اے 221 تھرپارکر ضمنی الیکشن، اب تک موصول ہونے والے غیر سرکاری نتائج میں تحریک انصاف کو شکست کا سامنا

تھرپارکر(مانیٹرنگ + آن لائن) این اے 221 تھرپارکرمیں پولنگ کاوقت ختم ہونے کے بعد ووٹوں کی گنتی کا عمل جاری ہے، قومی اسمبلی کے اس حلقے میں تحریک انصاف اور پیپلز پارٹی کے امیدواروں کے درمیان سخت مقابلے کی توقع ظاہر کی جارہی ہے، اس حلقے میں پولنگ سٹیشنز کی تعداد 318 ہے جن میں سے 78 پولنگاسٹیشنزکاغیرحتمی اورغیرسرکاری نتیجہ سامنے آیا ہے، اس نتیجے کے مطابق پیپلز پارٹی کے امیدوار پیرامیرعلی شاہ 30 ہزار817ووٹ لے کر آگے ہیں اور تحریک انصاف کے امیدوار نظام الدین 10ہزار89 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پرہیں۔ واضح رہے کہ دن کے وقت سندھ

میں قومی اسمبلی کے حلقے این اے 221 تھرپارکر میں ایک پولنگ اسٹیشن کو آگ لگا دی گئی۔سندھ میں قومی اسمبلی کے حلقے این اے 221 تھرپارکر میں پولنگ کا عمل جاری تھا کہ اس دوران پولنگ اسٹیشن کو آگ لگا دی گئی۔ تھرپارکر کے علاقے کیسراڑسماں میں پولنگ اسٹیشن کو آگ لگانے کے الزام میں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے امان اللہ سموں سمیت 3 کارکنوں کو گرفتار کر لیا گیا۔آگ لگنے کے باعث پولنگ کا سامان جل کر خاکستر ہو گیا جبکہ رینجرز اور پولیس کی بھاری نفری پولنگ اسٹیشن پہنچ گئی۔ رینجرز نے موقع پر پہنچ کر 5 افراد کو گرفتار کر لیا۔پولنگ اسٹیشن میں آگ لگنے کے باعث 3 پولیس اہلکاروں کی وردیاں بھی جل گئیں۔ اس حلقے میں بارہ امیدوار ایک دوسرے کے مدمقابلے ہیں، ووٹرز کی کل تعداد دو لاکھ اکیاسی ہزار سے زائد ہے، واضح رہے کہ یہ نشست پی پی پی کے رہنما اور رکن اسمبلی پیر نور محمد شاہ جیلانی کی وفات کی وجہ سے خالی ہو ئی تھی۔



اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں