27

نوشہرہ میں پی ٹی آئی کو الیکشن ہروانے والے پرویز خٹک کے بھائی کو بڑا جھٹکا لگ گیا

نوشہرہ کینٹ (آن لائن ) وزیر دفاع پرویز خٹک کے اپنے بھائی لیاقت خٹک کے ساتھ خاندانی اختلافات کھل کرسامنے آگئے۔ضمنی الیکشن پی کے 63میںپاکستان مسلم لیگ ن کے امیدوار اختیار ولی کی حمایت کا الزام، پرویز خٹک کی شکایت پر وزیر اعظم عمران خان نے فوری ایکشن لیتے ہوئے پرویز خٹک کے بھائی کو وزارت سےفارغ کرنے کے احکامات جاری کئے ، وفاقی وزیر دفاع پرویز خٹک کے بھائی لیاقت خٹک سے خیبر پختونخوا کے وزیر آبپاشی کی وزارت واپس لے لی گئی، ان پر نوشہرہ کے ضمنی الیکشن میں مسلم لیگ ن کے امیدوار اختیار ولی کی حمایت

کا الزام تھا جس میں تحریک انصاف کو گزشتہ روز شکست ہوئی۔گورنر خیبرپختونخوا نے خیبر پختونخوا کے وزیر آبپاشی لیاقت خٹک کو وزارت سے ہٹانے کا نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا ہے ۔نوٹیفکیشن کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی منظوری کے بعد پارٹی قواعد اور ڈسپلن کی خلاف ورزی پر وزیراعلٰی خیبرپختون خواہ محمود خان نے سخت نوٹس لیتے ہوئے پی کے 63 الیکشن میں اپوزیشن کے امیدوار کی مدد کرنے پر صوبائی وزیر لیاقت خٹک کو کابینہ سے فارغ کردیا ہے۔لیاقت خٹک وزیر دفاع پرویز خٹک کے بھائی ہیں۔ پارٹی ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی قیادت نے ضمنی انتخاب میں لیاقت خٹک کی جانب سے مسلم لیگ ن کے امیدوارکی حمایت کا نوٹس لیتے ہوئے یہ قدم اٹھایا۔دریں اثناء صوبائی معاون خصوصی اطلاعات کامران بنگش نے اس حوالے سے کہا ہے کہ اپنے ہی گراتے ہیں نشمین پر بجلیاں،نوشہرہ ضمنی انتخابات میں صوبائی وزیر لیاقت خٹک نے مسلم لیگ(ن) کے امیدوار کو سپورٹ کیا، وزیراعلیٰ محمودخان نے رپورٹ طلب کی تو واضح ہوا کہ لیاقت خٹک اور انکے خاندان نے پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار کے خلاف کام کیا، جس پر وزیراعلیٰ نے وزیراعظم سے مشاورت کی اوران کی منظوری سے لیاقت خٹک کو وزارت سے فارغ کردیا۔واضح رہے کہ گزشتہ روز پی کے 63 میں ہونے والے ضمنی انتخاب میں مسلم لیگ (ن) کے امیدوار اختیار ولی نے کامیابی سمیٹی تھی، پارٹی قیادت نے ضمنی انتخاب میں لیاقت خٹک کی جانب سے مسلم لیگ ن کے امیدوارکی حمایت کا نوٹس لیا تھا۔



اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں