32

سینٹ ٹکٹ کیلئے اپنی ہی پارٹی کے اندر سے مخالفت فیصل واوڈا بھی میدان میں آگئے ، ردعمل دیدیا

کراچی (این این آئی)وفاقی وزیر برائے آبی وسائل فیصل واوڈا نے کہا ہے کہ پارٹی میں اختلافات ہوتے ہیں کوئی بڑی بات نہیں، اللہ کے بعد پارٹی کا فیصلہ میرے لئے سب سے اہم ہے۔گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر فیصل واوڈا نے کہا کہ دہری شہریت کا کیس عدالت میں ہے اس پر کوئیرائے نہیں دے سکتا۔وفاقی وزیر فیصل واوڈا نے کہا کہ نون لیگی رہنما شاہد خاقان عباسی کی بہن سعدیہ عباسی کو عدالت نے نکالا، ان کی ہمشیرہ کے معاملے کی بھی تحقیقات کرلیں۔انہوں نے کہا کہ میں بھی ڈھائی کروڑ لوگوں کے دستخط لے کر کوئی خط

لکھ سکتا ہوں۔ایک سوال کے جواب میں وفاقی وزیر واوڈا نے کہا کہ مرتضی وہاب جو بھی کہہ لے میرا چھوٹا بھائی ہے، اسے بھی سینیٹ کا ٹکٹ ملتا تو مجھے خوشی ہوتی لیکن نہیں ملا۔یاد رہے کہ پی ٹی آئی میں ٹکٹوں کی تقسیم پر دھڑے بندی سامنے آگئی ہے ، فیصل واوڈا کو سینیٹ کا ٹکٹ دینے پر عبدالشکور شاد ناراض ہوگئے ہیں۔بلوچستان کے بعد سندھ میں بھی سینیٹ کی ٹکٹوں کی تقسیم پر اختلافات سامنے آگئے، فیصل واوڈا کو سینیٹ کا ٹکٹ دینے پر عبدالشکور شاد ناراض ہوگئے۔پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی عبدالشکور شاد نے انتہائی قدم اٹھانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا فیصل واوڈا کا ٹکٹ واپس نہ لیا گیا تو وہ ووٹ کاسٹ نہیں کریں گے۔اِدھر سیف اللہ ابڑو کے خلاف دیہی سندھ کےرہنماؤں نے محاذ بنا لیا، لیاقت جتوئی، مبین جتوئی اور دیگر نے گورنر سندھ عمران اسماعیل کو خط لکھ دیا، کہا کہ سیف ابڑو کرپشن میں ملوث، نیب میں کیسز ہیں۔دوسری جانب پاکستان تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی عامر لیاقت نے کہاہے کہ سینیٹ الیکشن میں حفیظ شیخکو ووٹ نہیں دوں گا۔تفصیلات کے مطابق سینیٹ انتخابات کیلئے پولنگ 3 مارچ کو ہو گی تاہم حکمران جماعت پاکستان تحریک انصاف میں ٹکٹوں کے معاملے پر شدید اختلافات سامنے آگئے ہیں ۔بلوچستان سے عبدالقادر کو سینیٹ کا ٹکٹ دیئے جانے پر کارکنوں کی جانب سے شدید ردعمل آیا جس پر پارٹی نے ٹکٹ ان سے واپس لے لیا۔بلوچستان کے بعد سندھ سے بھی ٹکٹوں کے معاملے پر آوازیں بلندہو گئیں، ارکان اسمبلی اور کارکنوں نے فیصل واوڈا کو ٹکٹ دیئے جانے پرشدید تحفظات کا اظہار کیا،اب رکن قومی اسمبلی عامر لیاقت نے حفیظ شیخ کو ووٹ دینے سے انکارردیا۔



اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں