22

آٹو موبائل چینی کمپنی درآمد شدہ اشیاء کی کم قیمت ظاہر کرکے اربوں روپے کی ٹیکس چوری میں ملوث نکلی،تہلکہ خیز انکشاف

اسلام آباد(آن لائن)ایف بی آر حکام نے چین کی کمپنی کیخلاف اربوں روپے کی ٹیکس چوری پر تحقیقات شروع کردی ہیں،چینی کمپنی کے خلاف گھیرا تنگ کرکے تمام ریکارڈ حاصل کرلیا گیا ہے،چین کی یہ کمپنی ن لیگ کے زمانے سے پاکستان میں کاریں درآمد کر رہی ہے جبکہ کاروں کے علاوہ دیگر آٹو سپیئر پارٹس بھی درآمد کرنے میں مصروف ہے۔ذرائع کے مطابق چین کی کمپنی400سے زائد سی پی یو یونٹ شنگھائی سے درآمد کرچکی ہے اور کسٹم ویلیو صرف11632 ڈالر ظاہر کی ہے جبکہ ملک کے اندر یہ گاڑی27000ڈالر فی کس کے حساب سے فروخت کرنے میںمصروف ہے

جبکہ چین کی یہ کمپنی آسٹریلیا میں یہ گاڑی 27000ڈالر کی قیمت پر فروخت کر رہی ہے۔ذرائع نے بتایا ہے کہ کسٹم انٹیلی جنس اس مقدمہ کی اعلیٰ پیمانے پر تحقیقات کرنے میں مصروف ہے یہ چینی کمپنی کا وطیرہ ہے کہ تمام درآمدات شدہ اشیاء کی کم قیمت ظاہر کرکے بھاری کسٹم ڈیوٹی بچائی جاتی ہے جس سے قومی خزانہ کو بھاری مالی نقصان اٹھانا پڑھ رہا ہے اور ایک عام اندازہ کے مطابق کم قیمت ظاہر کرکے یہ سال پاکستان کو6ارب ڈالر سے زائد کا نقصان پہنچاتے ہیں اور اس دھندا میں ایف بی آر اور کسٹم کے کرپٹ مافیا بھی شامل ہے۔



اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں