36

پی ٹی آئی اور آئی ایم ایف عوام کی مشکلات میں اضافے کے لیے ایک ہی پیج پر ہیں،تہلکہ خیز دعویٰ

لاہور (آن لائن) امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی اور آئی ایم ایف عوام کی مشکلات میں اضافے کے لیے ایک ہی پیج پر ہیں۔ حکومت کے ہزار دنوں میں عوام کی محرومیوں، مایوسیوں اور مصیبتوں میں اضافہ ہوا۔ مہنگائی، کرپشن میں ترقی سے عوام بدحال اور مافیاز کی چاندی ہوئی۔ قوم خوشحال پاکستان کے لیےنوٹ اور ووٹ سے جماعت اسلامی کو سپورٹ کریں۔ وزیراعظم کا یہ بیان کہ تبدیلی کے لیے پانچ سال ناکافی ہیں یہ ان کی ناکامی اور منفی تبدیلی کا اعتراف ہے۔پہلے وزیراعظم نے فرمایا کہ مجھے سو دن

دے دیں، پھر کہا چھ ماہ دے دیں، پھر کہا ایک سال دے دیں، اب ہزار دن گزر گئے عوام کی محرومیوں اور مایوسیوں میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے۔ انھوں نے کہا کہ یہ فیصلہ کرنا مشکل ہے کہ وزیراعظم نے یوٹرنز زیادہ لیے ہیں یا اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ زیادہ بار ہوا ہے۔ ہر روز یہ حکومت عوام کو کرنٹ لگاتی ہے اور ان کی چیخیں نکال رہی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے منصورہ میں جماعت اسلامی کی فی سبیل اللہ فنڈ مہم کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر نائب امراء جماعت اسلامی لیاقت بلوچ، میاں محمد اسلم، ڈپٹی سیکرٹری اظہر اقبال حسن، سید وقاص جعفری، ناظم مالیات جماعت اسلامی نذیر احمد جنجوعہ، سیکرٹری اطلاعات قیصر شریف اور مظہر محمود صدیقی بھی موجود تھے۔انھوں نے کہا کہ قوم نے پیپلزپارٹی، مسلم لیگ، پی ٹی آئی کی حکومتوں کو آزما لیا۔ ان سٹیٹس کو پارٹیوں نے ان کے ارمانوں کا خون اور قومی وقار کا سودا کیا ہے۔ ان کی حکومتوں میں کرپشن اور غیر ملکی قرضوں نے دن دگنی رات چوگنی ترقی کی ہے۔ عوام آئندہ عام انتخابات میں جماعت اسلامیکو ووٹ بھی دیں اور نوٹ بھی کیوںکہ جماعت اسلامی نے سیاست کے میدان میں عوام الناس کی جو خدمت کا فریضہ سرانجام دیا ہے وہ روز روشن کی طرح سب پر عیاں ہے۔سراج الحق نے کہا کہ پاکستان میں ایک قانون نہیں ہے۔ بڑوں کے لیے وی وی آئی پی اور غریب اور عام عوام کے لیے کچھ اور ہے۔ جو ویڈیو پوری قوم نے دیکھیہے اس میں عام ممبر جس نے پیسے لیے اس کا چہرہ تو سامنے آ گیا، لیکن جن لوگوں نے پیسہ جمع کر کے لوگوں کے ضمیر خریدنے کے لیے ان کو استعمال کیا ان کے نام سامنے نہیں آئے۔ اگر یہ کام وزیراعلیٰ کے کہنے اوراسپیکر ہائوس میں ہواتو یہ صرف فرد واحد یا دو افرادنہیں کر سکتے بلکہ اس میں پورا کنبہ شامل ہے۔ لہٰذا یہپورا ٹبر ایسا ہے جس کے بارے میں یہ کہہ سکتے ہیں کہ یہ کرپشن میں ملوث ہے اور کرپشن کی بنا پر یہ ساری عمارت کھڑی کی گئی ہے۔انھوں نے کہا کہ عوام کو بیدار کرنے ، مایوسیوں سے نکالنے اور تقسیم کرنے کی بجائے متحد اور صالح منزل دینے کی ضرورت ہے اور یہ کام جماعت اسلامی کی مخلص صالح قیادت ہی انجام دےگی۔ قوم سے اپیل کرتا ہوں جو اسلامی خوشحال پاکستان کی خواہش اور پاکستان کو حقیقی معنوں میں فلاحی، مستحکم اور ترقی دینا چاہتے ہیں اور اگلی منزلوں میں پاکستان کو اقوام عالم میں ایک سردار اور امام لیڈر کی صورت میں دیکھنا چاہتے ہیں وہ جماعت اسلامی کا ساتھ دیں۔ انھوں نے کہا کہ ہم 22کروڑ عوام کو مایوسیوں سے نکال کر خوشحالی کی راہ پر گامزن کریں گے۔ وی آئی پی اور عام آدمی کے سٹیٹس کو کا خاتمہ کر دیں گے۔ تعلیم، صحت، پینے کے صاف پانی کی سہولت فراہم کریں گے۔



اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں