32

نکے کا نام عمران خان ہے جبکہ نکے کے بڑے بھائی کا نام جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ ہے، عمران خان کو گھر بھیجنے کا آخری چانس، مریم نواز کا تہلکہ خیز اعلان

ڈسکہ (این این آئی)مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ ایک نااہل شخص کو بچانے کے لیے پورا نظام عدل اور عدلیہ کا وقار خطرے سے دوچار ہے، 19 فروری کو ہونے والے الیکشن، محض الیکشن نہیں ہیں بلکہ ووٹ چوروں کے خلاف جنگ ہے، مریم نواز نے کہا کہ عمران خان ملکی تاریخ کے سب سے بڑے چورہیں، لانگ مارچ عمران خان کو گھر بھیجنے کا آخری چانس ہے، انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کو خواجہ آصف کی وہ بات بہت بری لگی جو انہوں نے پارلیمنٹ میں کہی تھی کہ کوئی

شرم ہوتی ہے کوئی حیا ہوتی ہے،بیک ڈور رابطوں کی ضرورت ہمیں نہیں، انہیں ہے جو مشکل میں ہیں۔مسلم لیگ (ن) کے انتخابی جلسے میں خطاب کے دوران مریم نواز نے کہا کہ نواز شریف کی کہی ہوئی ایک ایک بات سچ ثابت ہورہی ہے، انہوں نے عمران خان کو مخاطب کرکے کہا کہ تھا کہ بچے یہ تمھارے بس کا روگ نہیں ہے۔انہوں نے خواجہ آصف کو کہا کہ نواز شریف کا ساتھ چھوڑ دو جس پر خواجہ آصف نے کہا کہ مر جاؤں گا لیکن ساتھ نہیں چھوڑوں گا۔مریم نواز نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کو خواجہ آصف کی وہ بات بہت بری لگی جو انہوں نے پارلیمنٹ میں کہی تھی کہ کوئی شرم ہوتی ہے کوئی حیا ہوتی ہے۔انہوں نے کہا کہ پورا پاکستان خواجہ آصف کی بات کہہ رہا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ 19 فروری کو الیکشن، محض ایک الیکشن نہیں بلکہ جنگ ہے جو نواز شریف نے ان ووٹ چوروں کے خلاف شروع کر رکھی ہے۔مریم نواز نے کہا کہ میں اللہ کا شکر ادا کررہی ہوں کہ تاریخ میں پہلی مرتبہ پنجاب اپنے حق کے لیے کھڑا ہوگیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہماری جنگ تمہارے ساتھ نہیں کیونکہ تم تو لے پالک بچے ہو اور اس الیکشن میںایک طرف نواز شریف ہے اور دوسری طرف آٹا چور۔ان کا کہنا تھا کہ تابع دار بندے نے عوام کی خدمت نہیں کی بلکہ سلیکٹرز کی خدمت میں لگ گیا۔مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر نے کہا کہ ‘جب ان کی طرف سے کوئی ووٹ مانگنے آئے تو پوچھنا کہ آٹا، چینی، بجلی، گیس، ادویات مہنگی کرکے کس منہ سے ووٹ مانگنے آئے ہو۔انہوں نےکہا کہ عمران خان کے دائیں، بائیں، آگے اور پیچھے بجلی، دوائیں اور چینی چور ہیں جبکہ نیچے اے ٹی ایمز ہیں۔مریم نواز نے جلسہ کے شرکا کو مخاطب کرکے کہا کہ پنجابیوں! نواز شریف اور شہباز شریف کی یاد آتی ہے؟ان کا کہنا تھا نواز شریف اور شہباز شریف کے بغیر پنجاب لاوارث ہوگیا ہے، بتاؤ پنجابیوں تمہاری روٹی چھین لی گئییا نہیں؟ جبکہ آج پنجاب رو رو کر نہ صرف نواز شریف کو یاد کرتا ہے بلکہ وارث شاہ کو یاد کرتا ہے۔انہوں نے جلسے میں شریک بی این پی کے کارکنوں کی شرکت پر ان کا شکریہ ادا کیا۔ان کا کہنا تھا کہ کراچی اور خیبرپختونخوا نواز شریف کو یاد کررہا ہے جہاں امن تباہ ہو رہا ہے، دہشت گردی دوبارہ جنم لے رہی ہے۔ان کا کہناتھا کہ پاک چین اقصادی راہداری (سی پیک) کا منصوبہ بند ہوگیا، سرمایہ کاری بند ہوگئی، تو بی این پی والو! بتاؤ بلوچستان بھی نواز شریف کو یاد کررہا ہے؟مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے جلسے کے شرکا سے سوال کیا کہ پاپا جوہن پیزا کس کا ہے؟ سی پیک کس کے حوالے ہے۔انہوں نے کہا کہ نکے کا نام عمران خان ہے جبکہنکے کے بڑے بھائی کا نام جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ ہے۔ان کا کہنا تھا کہ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ نے پیزا بنا بنا کر اربوں ڈالر کمالیے اور کرپشن پکڑی گئی اور جب چوری پکڑی گئی تو فکس میچ کے ذریعے بڑا بھائی چھوٹے بھائی کو استعفیٰ دینے گیا۔مریم نواز نے کہا کہ استعفیٰ دینے کے بعد نیچے نیچے کہتا ہے کہ اگر استعفیٰقبول کیا تو کرسی پر بیٹھنے کے قابل نہیں چھوڑیں گے۔انہوں نے وزیر اعظم عمران خان کا نام لیے بغیر کہا کہ بہت مجبور ہے، سر اٹھا کر نہیں چل سکتا، اگر ان کی تابع داری نہیں کرے گا تو کیا کرے گا۔ مسلم لیگ(ن) کی نائب صدر مریم نواز نے کہا کہ بیک ڈور رابطوں کی ضرورت ان کو ہے جو مشکل میں ہیں، ہمیں نہیں ہے۔جاتیامرا سے ڈسکہ کیلئے روانگی کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ایک نااہل شخص کو بچانے کے لیے پورا نظام عدل اور عدلیہ کا وقار خطرے سے دوچار ہے۔انہوں نے کہا کہ سینیٹ انتخابات سے قبل وفاداریاں تبدیل کرانے کے لیے اراکین پر فون کرکے دباؤ ڈالے جاتے ہیں جس کی وجہ سے لوگ مجبور ہو جاتےہیں۔مریم نواز نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کو توڑنے کی تاریخی کوشش کی گئی ہے، میرا نہیں خیال کسی جماعت کے اوپر اتنا ظلم اور زیادتی کی گئی ہے، پوری ریاست اور ادارے ایک جماعت کے خلاف جھونک دیے گئے ہیں، لیکن وہ جماعت نہیں ٹوٹی کیونکہ اب یہ نظریاتی جماعت بن چکی ہے، آپ جماعت کو تو توڑ سکتے ہیں لیکن نظریاتنہیں توڑ سکتے، یہ جماعت بھی نہیں توڑ سکے جو ان کی ناکامی اور شکست ہے۔انہوں نے کہا کہ عمران خان کو بچانے کے لیے جو الفاظ استعمال ہوئے ہیں، جب نواز شریف وزیراعظم تھے تو اس کے بالکل الٹ ہوا تھا، ہم انصاف کے 2 نظام کیخلاف آوازاٹھارہیہیں، لوگ چہرے، ریمارکس اور فیصلوں میں فرق دیکھ رہے ہیں۔ان کا کہناتھا کہ عوام یہ دیکھ رہے ہیں کہ ایک نالائق کو بچانے کے لیے سارے انصاف کے نظام، عدلیہ ججز کی عزت کو جھونکا جارہا ہے، ججز پر بھی یہ بات گراں گزرتی ہے اور کچھ مجبور بھی ہوسکتے ہیں لیکن یہ عدلیہ کی ساکھ اور عزت کے لیے اچھی چیز نہیں، ایک شخص کو بچانے کے لیے عدلیہ اور عدل کے پورے نظام کو جھونکناعقلمندی نہیں۔انہوں نے ویڈیو کے حوالے سے سوال پر کہا کہ ویڈیو بنانے والے، پیسے دینے والے اور لینے والے یہ خود ہیں، یہ کسے بے وقوف بنارہے ہیں اور عمران خان اٹھ کر کہتے ہیں ویڈیو کی ٹائمنگ نہ دیکھیں، جب آپ کو ٹائمنگ زیب دیتی ہے تو چیئرمین سینیٹ کا پورا الیکشن چوری کر لیتے ہو، اب تمہارے ارکان اسمبلی بھاگ رہےہیں تو اب آپ کو ٹائمنگ یاد آگئی ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ خفیہ رائے شماری کو سپورٹ نہیں کرتی، ہم ان کے دوہرے معیار کو منظر عام پر لانا چاہتے ہیں، ہم دل سے چاہتے ہیں کہ سینیٹ الیکشن میں جو حرکات ہوتی ہیں ان کا خاتمہ ہو۔مریم نواز نے کہا کہ یہ صرف خفیہ بیلٹ اور پیسوں سے نہیں ہوتا بلکہ فون کرائےجاتے ہیں کہ جلدی سے وفاداری تبدیل کرو، اپنی جماعت کو ووٹ نہ ڈالنا ورنہ تمہاری فلاں فائل کھل جائے گی، تمہاری فلاں ویڈیو ریلیز ہو جائے گی، تو یہ سلسلہ بھی بند ہونا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ ایک جعلی حکومت کے نصیب میں یہ قانون سازی نہیں ہے، یہ قانون سازی عوامی نمائندے کریں گے، عوام کی منتخب اسمبلی کرے گیجس کو عوام منتخب کر کے بھیجیں گے، یہ کسی کا مہرہ نہیں کرے گا۔انہوں نے کہاکہ اراکین بھاگنے سے مہرے کو تکلیف ہوئی ہے لیکن پی ڈی ایم اس کو کوئی ریلیف نہیں لینے دے گی۔جب ان سے سوال پوچھا گیا کہ ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا ہے کہ فوج کا سیاست سے کوئی لینا دینا نہیں، آپ کے پاس کوئی ثبوت ہیں تو سامنے لے کر آئیں،تو اس کے جواب میں مسلم لیگ(ن) کی نائب صدر نے کہا کہ ڈی جی آئی ایس پی آر میرے لیے محترم ہیں، فوج کے ادارے کے ترجمان اور اچھے انسان ہیں، وہ خود کو سیاست سے دور رکھتے ہیں لیکن جب وہ اس طرح کی بات کریں گے تو عوام میں مذاق اڑے گا۔انہوں نے کہاکہ پچھلے کئی سال ایک کے بعد ایک چیز عوام کے سامنےآئی ہے کہ کس طرح سینیٹ کا الیکشن جن کا حق تھا ان سے چھینا گیا، جسٹس شوکت صدیقی کے ساتھ جو ہوا، ان کے بیان پوری دنیا کے سامنے ہیں، کس طرح قاضی فائز عیسیٰ کے ساتھ ہو رہا ہے اور جس طرح 2018 میں عوام کے حق پر ڈاکا ڈالا گیا، پوری دنیا کے سامنے ہے، تو آپ بات وہ کریں جو دنیا مانے ورنہ آپ کی ساکھ خرابہو گی، ایک ادارے کی ساکھ خراب ہو گی کیونکہ آپ کے ایک ادارے کے ترجمان ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ آپ کی ساکھ کے لیے اچھا نہیں ہے، اس سے بہتر ہے کہ آپ خاموشی اختیار کریں اور اس چیز پر بالکل بات نہ کریں لیکن غلط بیانی نہ کریں۔انہوں نے کہا کہ ہم انتخابی اصلاحات ضرور کریں گے، پی ڈی ایم بھی یہی چاہتی ہے، پاکستانمسلم لیگ(ن) بھی یہی چاہتے ہے، پاکستان مسلم لیگ(ن) بھی یہی چاہتی ہے کہ حقیقی جمہوریت ہو اور جس کو لوگ ووٹ ڈالیں، ڈبو میں سے اسی کا ووٹ نکلے، آر ٹی ایس نہ بیٹھ جائے اور جنوبی پنجاب کا محاذ اچانک نہ کھڑا ہو جائے لیکن یہ قانون سازی اس بندہ تابعدار کے ساتھ بیٹھ کر نہیں ہو سکتی۔مریم نواز نے کہا کہ پارٹی سے بےوفائی کرنے والوں کے نام سامنے آنے چاہئیں، کچھ ہمیں پتہ بھی ہے لیکن بات یہ ہے کہ اگر کوئی شخص اپنی پارٹی سے بے وفائی نہیں کرنا چاہتا اور آپ اس پر اس قسم کے دباؤ ڈالیں گے، اس کو فون کرائیں گے تو لوگ مجبور ہو جاتے ہیں لیکن اب یہ سلسلہ نہیں چلے گا، اب احتساب یہ جماعتیں کم کریں گی اور یہ عوام زیادہ احتساب کریں گے، یہ چہرے اب چھپے نہیں رہیں گے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ شاید ڈی جی آئی ایس پیآر کو بیک ڈور رابطوں کا علم نہ ہو، جب بات ہوتی ہے تو اوپر کے لیول پر ہوتی ہے، ہر کسی کو اعتماد میں نہیں لیا جاتا، بیک ڈور رابطوں کی ضرورت ان کو ہے جو مشکل میں ہیں، ہمیں نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ میں یہ مانتی ہوں کہ سلیکٹرز کو سامنا کرنا پڑ رہا ہے، ان کو یہ طعنے دیے جاتے ہیں کہ یہ ہے وہ سوغات جس کو آپ لے کر آئے تھے، جس نے پاکستانی عوام کا بیڑا غرق کردیا ہے، تو جواب تو ان کو دینا پڑے گا لیکن جواب اب عوام لیں گے۔

موضوعات:

ہمیں بہرحال

یارلنگ سانگپو دنیا کا بلند ترین دریا ہے‘ یہ 16 ہزار4 سو فٹ کی بلندی پر بہتا ہے‘ گلیشیئر شی گیٹس  سے نکلتا ہے‘ پورے تبت کو عبور کرتا ہے اور پھر بھوٹان اور بھارت میں داخل ہو جاتا ہے‘ یہ دریا بھارت کی ریاست ارون چل میں سیانگ ہو جاتا ہے‘ آسام میں براہما پترا بن جاتا ….مزید پڑھئے‎

یارلنگ سانگپو دنیا کا بلند ترین دریا ہے‘ یہ 16 ہزار4 سو فٹ کی بلندی پر بہتا ہے‘ گلیشیئر شی گیٹس  سے نکلتا ہے‘ پورے تبت کو عبور کرتا ہے اور پھر بھوٹان اور بھارت میں داخل ہو جاتا ہے‘ یہ دریا بھارت کی ریاست ارون چل میں سیانگ ہو جاتا ہے‘ آسام میں براہما پترا بن جاتا ….مزید پڑھئے‎



اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں