44

زلزلے کےشدید جھٹکوں بعد ریسکیو 1122 ہائی الرٹ کردیا گیا

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان کے مختلف شہروں میں زلزلے کے شدید جھٹکے ، لاہور میں ریسکیو سروس 1122 کو ہائی الرٹ کردیا گیا ۔نجی ٹی وی کے مطابق ترجمان ریسکیو سروس نے بتایا کہ ڈی جی ریسکیوپنجاب نےریسکیو 1122 کوہائی الرٹ کردیا ہے۔ ابھی تک زلزلے سے کسی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔پاکستان میٹ ڈپارٹمنٹ کے مطابق زلزلہ پاکستانی وقت کے مطابقرات 10 بجکر 2 منٹ پر آیا جس کی شدت 6.4 ریکارڈ کی گئی جبکہ گہرائی 80 کلو میٹر زیر زمین تھی اور مرکز تاجکستان میں تھا۔ملک شدید زلزلے سے لرز گیا ۔ زلزلہ پیما مرکز کے

مطابق ریکٹر سکیل پر زلزلے کی شدت 6.4 ریکارڈ کی گئی ہے ،ملک میں آنے والے زلزلے کا دورانیہ 20 سیکنڈکا تھا۔زلزلہ پیما مرکز کے مطابق اسلام آباد، راولپنڈی، پشاور، مردان، سوات، مظفر آباد، لوئر دیر، بھلوال، ملتان، ٹوبہ ٹیک سنگھ، میانوالی، بھکر، گوجرانوالہ اور فیصل آباد سمیت ملک بھر میں زلزلے کے شدید جھٹکے محسوس کئے گئے۔زلزلہ پیما مرکزکی جانب سے اس زلزلے کے آفٹر شاکس بھی آنے کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے ، زلزلہ پیما مرکز کے مطابق زلزلے کی گہرائی 80لومیٹر جبکہ مرکز تاجکستان اور افغانستان کی سرحد تھی۔واضح رہے کہ ملک بھر میں لوگ کلمے کا ورد کرتے ہوئے گھروں سے باہر نکل آئے۔زلزلہ اتنا شدید تھا کہ در و دیوار ہل گئے، ابھی تک کہیں سے زلزلے سے نقصان کی خبر موصول نہیں ہوئی ہے۔ واضح رہے کہ کراچی سے اسلام آباد، کوئٹہ سے پشاور، مکران سے ایبٹ آباد اور گلگت سے چترال تک تمام شہر زلزلوں کی زد میں ہیں، جن میں کشمیر اور گلگت بلتستان کے علاقے حساس ترین شمار ہوتے ہیں۔ زلزلے کے اعتبار سے پاکستان دنیا کا پانچواں حساس ترین ملک ہے۔پاکستان انڈین پلیٹ کی شمالی سرحد پر واقع ہے جہاں یہ یوریشین پلیٹ سے ملتی ہے۔ یوریشین پلیٹ کے دھنسنے اور انڈین پلیٹ کے آگے بڑھنے کا عمل لاکھوں سال سے جاری ہے۔ پاکستان کے دو تہائی رقبے کے نیچے سے گزرنے والی تمام فالٹ لائنز متحرک ہیں جہاں کم یا درمیانے درجہ کا زلزلہ وقفے وقفے سے آتا رہتا ہے۔کشمیر اور گلگت بلتستان انڈین پلیٹ کی آخری شمالی سرحد پر واقع ہیں اس لئے یہ علاقے حساس ترین شمار ہوتے ہیں۔ اسلام آباد، راولپنڈی، جہلم اور چکوال جیسے بڑے شہر زون تھری میں شامل ہیں۔ کوئٹہ، چمن، لورالائی اور مستونگ کے شہر زیرِ زمین انڈین پلیٹ کے مغربی کنارے پر واقع ہیں، اس لیے یہ بھی ہائی رسک زون یا زون فور کہلاتا ہے۔



اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں