41

ایم پی ایز کی خریدو فروخت کی ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد وزیراعظم کا کے پی کے وزیر قانون سے استعفیٰ لینے کا فیصلہ

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک/آن لائن )وزیراعظم عمران خان نے صوبہ خیبرپختونخوا کے وزیر قانون سے استعفیٰ لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی نے کہا ہے کہ وزیراعظم نے کے پی کے کے وزیر قانون سےاستعفیٰ لینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ وزیراعظم عمران خان نے نے وزیراعلی خیبر پختونخواہ محمود خان کو احکامات دے دئیے۔ اس بات کی تفصیلی انکوائری کر کے رپورٹ پیش کی جائے گی۔ان کا کہنا تھا کہ آج کی وڈیو نے ثابت کر دیاکہ وزیراعظم عمران خان کا موقف درست تھا-کرکٹ میں نیوٹرل ایمپائر لانے

کے بعد عمران خان اب سینیٹ میں صاف شفاف الیکشن کا رواج لانا چاہتے ہیں۔آج کی وڈیو میں اگر کوئی تحریک انصاف کا ممبر ہو یا کسی اور پارٹی کا سلوک ایک جیسا ہو گا۔کپتان کسی کرپٹ کو نہیں چھوڑے گا۔ واضح رہے کہ سینیٹ الیکشن 2018 میں ایم پی ایز کی خرید و فروخت کی ویڈیو منظر عام پر آگئی ہے جس میں میں اراکان اسمبلی کو پیسے وصول اور ادا کرتے دیکھا جاسکتا ہے۔2018 میں پی ٹی آئی ارکان کو خریدنے کیلئے نوٹوں کے ڈھیر لگا دیئے گئے۔ سینیٹ الیکشن 2018 میں ووٹ کے بدلے ضمیر کے سودے ہوتے رہے۔ 2018 میں پی ٹی آئی کے 20 ارکان کو فارغ کیا گیا، 2018 کے سینیٹ الیکشن میں پی ٹی آئی ارکان کروڑوں میں بکے۔ پاکستان تحریک انصاف کے رہنما فواد چودھری نے نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ووٹ کے بدلے پیسے لینا انتہائی شرم کی بات ہے، سپریم کورٹ کو معاملے پر ازخود نوٹس لینا چاہیئے، فنڈنگ میکنزم پر قانون سازی ہونی چاہیئے، یہ لوگ پیسے خرچ کر کے ایوان میں آتے ہیں جبکہ معاون خصوصی شہباز گل کا کہنا تھا کہ وزیراعظم 25 سال سے اس معاملے کو اٹھاتے رہے، عمران خان نے الیکشن میں خرید و فروخت کیخلاف آواز اٹھائی ہے۔



اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں